April 17, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/deborrah-k.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253

ان میں ۷۰؍ فیصد گھر مقبوضہ بیت المقدس کے مشرقی حصے میں تعمیر کیے جائیں گے جبکہ دیگر تعمیرات بیت اللحم میں کی جائیں گی۔

An area in the West Bank where Israel has ramped up illegal construction. Photo: INN

مغربی کنارے کا ایک علاقہ جہاں اسرائیل نے غیرقانونی تعمیرات کا سلسلہ بڑھادیا ہے۔ تصویر : آئی این این

اسرائیل نے مقبوضہ مغربی کنارے پر یہودی آبادکاری بڑھانے کے لئے مزید ہزاروں غیر قانونی تعمیرات کی منظوری دے دی۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق اسرائیلی حکومت نے مقبوضہ مغربی کنارے پر مزید غیر قانونی تعمیرات کا فیصلہ کیا ہے جس کے تحت۳۴۰۰؍ گھر بنانے کی منظوری دی گئی ہے۔ 
رپورٹس کے مطابق ان غیر قانونی تعمیرات میں سے۷۰؍ فیصد گھر مقبوضہ بیت المقدس کے مشرقی حصے میں تعمیر کئے جائیں گے جب کہ دیگر تعمیرات بیت اللحم اور اس کے قریبی علاقے میں کی جائیں گی۔  اسرائیلی وزیر کا کہنا تھا کہ یہ نئی تعمیرات یہودی کالونی معلی ادومیم پر فلسطین کے حالیہ حملے کے جواب میں کی جارہی ہیں۔ اس حوالے سے اسرائیلی اخبار کی رپورٹ میں تصدیق کی گئی ہےکہ ہائر پلاننگ کمیٹی اور سول ایڈمنسٹریشن باڈی نے حکومتی پالیسی پر عملدرآمد کا منصوبہ بنایا ہے جس کے تحت مقبوضہ مغربی کنارے پر ۳۶۷۶؍ تعمیرات کا منصوبہ ہے جن میں سے۲۴۵۲؍ تعمیرات معالی ادومیم میں کی جائیں گی۔ اسرائیلی وزیر خزانہ کا کہنا ہےکہ گزشتہ چند سالوں میں مقبوضہ مغربی کنارے پر۱۸؍ہزار ۵۰۰؍ سے زائد تعمیرات کی منظوری دی جاچکی ہے۔ دوسری جانب فلسطینی حکام نے اسرائیل کی نئی تعمیرات کی منظوری کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس حوالے سے گزشتہ برس جون میں منظوری کی اطلاعات موصول ہوئی تھیں۔ رپورٹس کے مطابق بیشتر عالمی برادری اسرائیل کی اس یہودی آباد کاری کے منصوبے کو بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی قرار دیتی ہے لیکن اسرائیل مسلسل ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے غیر قانونی تعمیرات کررہا ہے۔ 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *